Home > Uncategorized > Barqi Azmi ghazal for Mauj-e-Sukhan group

Barqi Azmi ghazal for Mauj-e-Sukhan group

موج سخن کے آٹھویں عالمی آن لائن فی البدیہ طرحی مشاعرے بتاریخ ۱۴ دسمبر ۲۰۱۳ کے لئے میری کاوش احمد علی برقی اعظمی

کہیں نہ تیر نگاہوں کا اُس کی چل جائے مریضِ عشق کا دم دیکھ کر نکل جائے

کہیں نہ ایسا ہو سوزِ دروں کی حدت سے ’’ جگر کی آگ سے دل کا چراغ جَل جائے‘‘

نہیں وہ وعدہ شکن اعتبار کے قابل نہ کرکے وعدۂ فردا کہیں بدل جائے

نہیں ہے پاس جسے اپنی باغبانی کا چمن میں غنچہ و گُل کو نہ وہ مَسَل جائے

جنونِ شوق کی منزل میں پیچ و خم ہیں بہت جو جائے کوچۂ جاناں میں سر کے بَل جائے

جو کررہا ہے مرے آشیاں کو خاکستر اس آگ میں نہ کہیں اس کا گھر بھی جل جائے

رہے وہ ڈر کے زمانے کے تازیانے سے یہ کہہ دو اشہبِ دوراں سے وہ سنبھل جائے

کہاں سے پیش کرے لا کے چاند تارے اسے کسی غریب کا بچہ اگر مچل جائے

غریبِ شہر ٹھکانے لگائے گا اُس کو امیر شہر کا تیور اگر بدل جائے

ہوا اُجاڑ نہ دے قصر سلطنت اُس کا یہ انقلاب نہ اس کو کہیں نِگل جائے

ہے وقت اب بھی کہ وہ جیت لے عوام کا دل وہ پاس لے کے مسائل کا اُن کے حَل جائے

نہ کام آئے گا مَلنا اُسے کفِ افسوس جو وقت ہے نہ کہیں ہاتھ سے نکل جائے

نہ کام آئے گی اب کوئی اُس کی حیلہ گری کَہیں نہ لوگ کہیں وہ یہاں سے ٹَل جائے

خزاں کو مات نہ دے دے کہیں ’’ بہارِ عرب‘‘ کہیں نہ ایسی کوئی غَرب چال چل جائے

بنے ہیں آج جو عالم میں مُہرۂ شطرنج نہ تخت و تاج کہیں اُن کا بھی بدل جائے

ابھی بھی وقت ہے پڑھ لیں نوشتۂ دیوار کیں نہ ہاتھ سے ان کے محل نکل جائے

ابھی جو سرد ہے وہ آنچ سے مسائل کی جوان خون رگوں میں نہ وہ اُبَل جائے

رہیں گے کاخ نشیں کیسے چین سے اُس وقت جو اقتدار کا پتھر کہیں پِگھل جائے

ملے نہ ’’ موجِ سخن‘‘ سا جو عالمی فورم جو کوئی لے کے کہاں اپنی پھر غزل جائے

ہے سیلِ اشک رواں چشمِ تر سے جو برقی کہیں نہ خونِ جگر آنسو ؤں میں ڈھل جائے

Categories: Uncategorized
  1. No comments yet.
  1. No trackbacks yet.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: