Home > Uncategorized > Barqi Azmi tarhi ghazal for Gulkariyan

Barqi Azmi tarhi ghazal for Gulkariyan

a few seconds ago

12:34am

گلکاریاں انٹر نیشنل اردو ادبی فورم کے ۴۹ ویں آن لائن فی البدیہہ طرحی مشاعرے کے لئے میری کاوش احمد علی برقی اعظمی

بات ملحوظ یہ سدا رکھنا

ضوشاں علم کا دیا رکھن

ا ذہن اور فکر کے دریچوں کو

اپنے ہر حال میں کُھلا رکھنا

خود کو اس کارگاہِ عالم میں

علمِ حاضر سے آشنا رکھنا

مُنحصر ہے اسی پہ مستقبِل

اپنے ماضی سے واسطہ رکھنا

بھول جانا نہ عظمتِ رفتہ

بازیابی کا حوصلہ رکھنا

غرب حاوی نہ شرق پر ہو جائے

گوشِ شنوا کو اپنے وا رکھنا

رکھنا اپنا بھرم سدا قایم

عزتِ نفس کو بچا رکھنا

چار دن کی ہے چاندنی دنیا

آسماں سر پہ مت اُٹھا رکھنا

غنچہ دل خزاں کا ہو نہ شکار

اسے برقی ہرا بھرا رکھنا

ا

Categories: Uncategorized
  1. No comments yet.
  1. No trackbacks yet.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: