Archive

Archive for May, 2013

Waqt ki aawaz hain Muslim Saleem – tribute by Dr. Barqi Azmi

May 31, 2013 6 comments

وقت کی آواز ہیں مسلم سلیم

 

شاعرِ ممتاز ہیں مسلم سلیم

 

جانفزا ہے اُن کا تخلیقی شعور

 

صاحب اعجاز ہیں مسلم سلیم

Advertisements
Categories: Muslim Saleem

Muslim Saleem – Seh ghazla – May 25, 2013

May 27, 2013 1 comment

MOHABBAT FORUM KAY 25 MAY KAY TARHI MUSHUARE KAY LIYE MUSLIM SALEEM KA SEH GHAZLA. MISRA-E-TARAH “UBAR RAHI HAI CHIRAGHON MEIN PHIR CHAMAK KOI”

NA KUCHH MIZAJ MEIN NARMI, NA HAI LACHAK KOI

TO UNKAY SAATH CHALE KAISAY DOOR TO KOI

THI LA-SHAOOR MEIN AAHAT KISI KAY QADMAON KI

PALAT KAY DEKHA, NA THA DOOR-DOOR TAK KOI

WO SIRF YAAD THI, LEKIN SHADEED THI ITNI

KAY JAISAY AA GAYA PEHLOO MAIN YAK-BAYAK KOI

BUS EK PAL MAIN TA’LLUQ TO TARK KAR BAITHAY

TAMAM UMR SATATI RAHI KASAK KOI

SHAJAR TO KAAT DIYA, YEH MAGAR NAHEEN SOCHA

SUNAAI DEGI NA CHIDYON KI AB CHAHAK KOI

KISI ZAMAANE MEIN ISKO KHULOOS KEHTE THAY

YEH SHOLA BUJH GAYA, ISMAIN NAHEEN LAPAK KOI

HAI HAQ KA MAARIKA, KOI BULAO MUSLIM KO

KAY SAAF-GOI MEIN USKO NAHEEN JHIJHAK KOI

* * * * * * * * ************************* * * * * * *

JO CHAND-TAARON MAIN HAI, YEH BHI DAMAK KOI

DIKHAYE AAPSA CHEHRA HAMEIN FALAK KOI

YEH CHUDIYAN, YEH DOPATTA, YEH AARIZ-E-GULGOON

CHURA LAY RANG NA IN KAY KAHEEN DHANAK KOI

NA KOI SHOR NA AAHAT, KISI KAY JAANE SAY

YEH DIL KA KOOCHA HAI SUNSAAN SI SADAK KOI

SADDAYEN KAISI UTHI HAIN YEH USKI PAYAL SAY

BATA RAHI HAI HAMEN RAAZ YEH CHHANAK KOI

TUMHARE SAATH HAMAIN DEKH KAR UTHHA MEHSHAR

KISI KI JAAN JALI, REH GAYAHAI BHAK KOI

BHULA RAHAY THAY KI PHIR ZIKR USKA CHHED DIYA

HAMARAY ZAKHMON PAY MALNAY LAGA NAMAK KOI

SABHI YEH KEHTAY HAIN MUSLIM HAI UNKA DEEWANA

YEH BAAT SACH HAI TO IS MEIN NAHEEN HATAK KOI

+++++++++++++++++++++++++++++++++++++++++++++++

TUMHAAREAANE KI KYA MIL GAYEE BHANAK KOI

“UBHAR RAHIHAI CHIRGHON MEIN PHIR CHAMAK KOI”

PURAANE DAUR KI HAMKO DIKHA JHALAK KOI

YEH KYA NAWA HAI KAY JIS MEIN NAHEEN LAPAK KOI

BAS EK SHOR NAYE DAUR KI HAI MAUSEEQI

KE AB SADAON MAIN BAQI NAHEEN KHANAK KOI

PHIR US KAYBAAD IN AANKHON MEIN KOI BHI NA JACHA

KUCCH IS ADA SAY DIKHA KAR GAYAJHALAK KOI

HAMARI BAZM MEIN WO NOOR BAN KAY KYA AAYE

KHULI HI RAH GAYEE, JHAPKI NAHEEN PALAK KOI

KISI KO DOST BANAANE KI HO AGAR KHWAHISH

TALAASH US MEIN KARO QADR-E-MUSHTARAK KOI

KISI GIROH SAY WABASTAGI NAHEEN APNI

HAM AISE LOGONG KO MILTA NAHEEN PADAK KOI

YEG FACBOOK SAY HI DIN RAAT CHIPKA REHTA HAI

SAWAAR ZEHNPAY MUSLIM KAY KYA HAI JHAK KOI

طرحی سہ غزلہ برائے محبت گروپ
عالمی آن لائن مشاعرہ : ۲۵؍ مئی ۲۰۱۳
از مسلمؔ سلیم

نہ کچھ مزاج میں نرمی نہ ہے لچک کوئی
تو اسکے ساتھ چلے کیسے دور تک کوئی
تھی لاشعور میں آہٹ کسی کے قدموں کی
پلٹ کے دیکھا، نہ تھا دور دور تک کوئی
وہ صرف یاد تھی لیکن شدید تھی اتنی
کہ جیسے آ گیا پہلو میں یک بییک کوئی
بس ایک پل میں تعلق تو ترک کر بیٹھے
تمام عمر ستاتی رہی کسک کوئی
شجر تو کاٹ دیا یہ مگر نہیں سوچا
سنائی دے گی نہ چڑیوں کی اب چہک کوئی
کسی زمانے میں اسکو خلوص کہتے تھے
یہ شعلہ بجھ گیا اس میں نہیں لپک کوئی
بہشت ملتی ہے دہشت سے اور تشدّد سے
نکال ڈالے دماغوں سے یہ سنک کوئی
چہار سمت سے دشمن نے ہم کو گھیر لیا
کسی بھی سمت سے آتی نہیں کمک کوئی
ہے حق کا معرکہ، کوئی بلاؤ مسلمؔ کو
کہ صاف گوئی سے اس کو نہیں جھجھک کوئی
************
جو چاند تاروں میں ہے یہ بھی ہے دمک کوئی
دکھائے آپ سا چہرا ہمیں فلک کوئی
یہ چوڑیاں یہ دوپٹہ یہ عارضِ گلگوں
چرا لے رنگ نہ انکے کہیں دھنک کوئی
نہ کوئی شور نہ آہٹ، کسی کے جانے سے
یہ دل کا کوچہ ہے سنسان سی سڑک کوئی
صدائیں کیسی اٹھی ہیں یہ اسکی پایل سے
بتا رہی ہے ہمیں راز یہ چھنک کوئی
تمہارے ساتھ ہمیں دیکھ کر اٹھا محشر
کسی کی جان جلی رہ گیا ہے بھک کوئی
بھلا رہے تھے کہ پھر ذکر اسکا چھیڑ دیا
ہمارے زخموں پہ ملنے لگا نمک کوئی
سبھی یہ کہتے ہیں مسلمؔ ہے ان کا دیوانہ
یہ بات سچ ہے تو اس میں نہیں ہتک کوئی
************
تمھارے آنے کی کیا مل گئی بھنک کوئی
’’ابھر رہی ہے چراغوں میں پھر چمک کوئی‘‘
پرانے دور کی ہم کو دکھا جھلک کوئی
یہ کیا نوا ہے کہ جس میں نہیں لپک کوئی
بس ایک شورنئے دور کی ہے موسیقی
کہ اب صداؤں میں باقی نہیں کھنک کوئی
پھر اس کے بعد ان آنکھوں میں کوئی بھی نہ جچا
کچھ اس ادا سے دکھا کر گیا جھلک کوئی
ہماری بزم میں وہ نور بن کے کیا آئے
کھلی ہی رہ گئی، جھپکی نہیں پلک کوئی
کسی کو دوست بنانے کی ہو اگر خواہش
تلاش اس میں کرو قدرِ مشترک کوئی
کسی گروہ سے وابستگی نہیں اپنی
ہم ایسے لوگوں کو ملتا نہیں پدک کوئی
یہ فیس بک سے ہی دن رات چپکارہتا ہے
سوار ذہن پہ مسلمؔ کے کیا ہے جھک کوئی
کمک: Reinforcement
پدک: Medal

Tarhi ghazal barai Mohabbat

Categories: Muslim Saleem

TRIBTE TO MUSLIM SALEEM BY NADEEM AKHTAR NADEEM

TRIBTE TO MUSLIM SALEEM BY PIRZADA NADEEM AKHTAR NADEEM MANGANAVI, LONDON.

URDU ME AIK NAAM HaY MUSLIM SALEEM KA
JIDDAT GHAZAL ME KAAM HAY MUSLIM SALEEM KA.

  • Syed Zia Rizvi URDU ADAB MEn BARHA NAM HAI MUSLIM SALEEM KA.SAHAFAT MEn BARHA MUQAM HAI MUSLIM SALEEM KA.URDU ZUBAN KI BAQA KE LIYE BARHA KAM HAI MUSLIM SALEEM KA. XUDAWAND KAREEM UNHEn AUR UNKI FAMILY KO APNI HIFZ-O-AMAAN MEn RAKHE.SHAD AUR ABAAD RAKHE AMEEN SUM AMEEN.
Categories: Muslim Saleem

NASA KI SURAJ KAY MAGHRIB SAY NIKALNY KI PEESHENGOI KI TAAID PAR MANZOOM TAASSURAT

MAGHRIB SAY AYEGA KE QAYAMAT QAREEB HAI

SURAJ BATEYGA KE QAYAMAT QAREEB HAI

FARMAYI THI YE BAAT HAMARE RASOOL (SAW) NAY

AB YEH JATAYEGA KE QAYAMAT QAREEB HAI

——M U S L I M S A L E E Msuraj maghrib say copy

Categories: Muslim Saleem

Muslim Saleem – ghazal – May 21, 2013

Ghazal 21052013

Categories: Muslim Saleem

Muslim Saleem – ghazal – May 14, 2013

May 17, 2013 1 comment

Muslim SAleem Ghazal May 14, 2013 Read more…

Categories: Muslim Saleem

Rafiq Ahmad Naqsh passes away

شاعر،ادیب و مترجم رفیق احمد نقش کل 15 مئی، 2013 کو کراچی میں انتقال کرگئے۔ ان کی تدفین آج 16 مئی کو ظہر کے وقت کی جائے گی۔ وہ ایک ادبی پرچے “تحریر” کے مدیر بھی تھے۔ Read more…
Categories: Urdu News