Home > Urdu poems and prose latest > احمد علی برقی اعظمی – انحراف ادبی فورم کے آن لائن فی البدیہہ طرحی مشاعرے مورخہ ۳۰ مارچ ۲۰۱۲کے لئے

احمد علی برقی اعظمی – انحراف ادبی فورم کے آن لائن فی البدیہہ طرحی مشاعرے مورخہ ۳۰ مارچ ۲۰۱۲کے لئے

بے حال ہیں ٹوٹے ہوئے تارے کی طرح ہم

ہیں مال مین اب ایک خسارے کی طرح ہم

لے جاتے ہیں حالات جدھر جاتے ہیں اُس سمت

طوفانِ حوادث کے ہیں دھارے کی طرح ہم

دنیا یہ سمجھتی ہے ہمیں ایک تماشا

’’ نظروں کی طرح لوگ نظارے کی طرح ہم‘‘

کیوں برق کی زد میں ہے فقط اپنا نشیمن

ہیں گردشِ حالات کے مارے کی طرح ہم

خوں آتشِ سیال کی صورت ہے بدن میں

جیسے ہوں کسی ایک شرارے کی طرح ہم

کب تک یونہی اب اُس کی نگاہوں سے بچیں گے
دُزدیدہ نگاہی کے اشارے کی طرح ہم

احمد علی برقی سے نہیں اُس کو کوئی اُنس

تھے جس کے لئے ایک سہارے کی طرح ہم

  1. No comments yet.
  1. No trackbacks yet.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: